پاکستان سے گونگی، بہری نوجوان لڑکی کو برطانیہ لے جا کر جنسی غلام بنا دیا گیا، ایسی تفصیلات کہ جان کر ہر پاکستانی شرم محسوس کرے


پاکستان سے ایک سفاک جوڑے نے گونگی بہری لڑکی کو برطانیہ لیجا کر جنسی غلام بنا لیا۔ اس سے دن بھر سخت کام لیا جاتا اور جب وہ تھک جاتی تو تہہ خانے میں بند کردیا جاتا اور رات کو گھر کا سربراہ اسے جنسی طور پر زیادتی کا نشانہ بناتا۔
برطانوی اخبار نے ایک دل دہلا دینے والی رپورٹ شائع کی ہے جس میں ایک پاکستانی جوڑے کے متعلق بتایا گیا ہے کہ جون 2000 میں الیاس اور ان کی اہلیہ لاہور سے ایک دس سالہ بچی کو جعلی پاسپورٹ کے زریعے بیس سال کو ظاہر کر کے برطانیہ لائے۔ لڑکی قوت سماعت و گویائی سے محروم تھی اور وہ یہ نہیں جانتی تھی کہ اس کے والدین اسے پیسوں کے عوض ان درندہ صفت افراد کے حوالے کر رہے ہیں۔ 
ڈیلی میل کی رپورٹ میں بتایا گیا کہ برطانیہ آ کر صفیہ نامی اس بچی کی زندگی جہنم بن گئی جہاں اسے ایک تاریک کمرے میں بند کیا گیا تھا اور جب بھی اس کو کسی کام کیلئے بلایا جاتا تھا تو اس کے کمرے کا بلب جلا کر بند کر دیا جاتا تھا۔
صفیہ کے زمے ان کے بڑے سے گھر کی صفائی کرنا کھانا بنانا، کپڑیے دھونا اور برتن دھونے کے کام شامل تھے۔ اس کی اذیت صرف یہیں پر ہی ختم نہیں ہوتی بلکہ 84 سالہ الیاس عاشر رات گئے اس کے کمرے میں داخل ہوتا اور اس کو جنسی بدسلوکی کا شکار بناتا۔ 


پاکستان سے گونگی، بہری نوجوان لڑکی کو برطانیہ لے جا کر جنسی غلام بنا دیا گیا، ایسی تفصیلات کہ جان کر ہر پاکستانی شرم محسوس کرے پاکستان سے گونگی، بہری نوجوان لڑکی کو برطانیہ لے جا کر جنسی غلام بنا دیا گیا، ایسی تفصیلات کہ جان کر ہر پاکستانی شرم محسوس کرے Reviewed by Admin on April 28, 2020 Rating: 5